Uncategorized

Millions of hungry Myanmar people are waiting for help, says UN

GENEVA: A United Nations agency says about a quarter of Myanmar's population, or more than 14 million people, will need humanitarian aid this year.

The United Nations Office for the Coordination of Humanitarian Affairs (OCHA) has released a report on the need for humanitarian assistance in Myanmar.

Food and fuel prices have risen sharply in Myanmar since a military coup in February last year, the report said.

The report also said that the human condition of the country has become more serious due to the global outbreak of Corona virus. The report estimates that 14.4 million people will need assistance such as food and medical supplies.
The OCHA expressed concern about the effects of the corona virus outbreak on education, saying that the closure of schools in 2020 and 2021 affected the education of about 12 million children.

According to the report, the people of Myanmar are facing an unprecedented crisis of political, social and economic, human rights and humanitarian aid and with it the needs are increasing dramatically.
Millions of hungry Myanmar people are waiting for help, says UN

جنیوا : اقوام متحدہ کے ایک ادارے نے کہا ہے کہ میانمار میں اس سال آبادی کے تقریباً ایک چوتھائی حصے یا ایک کروڑ40 لاکھ سے زائد افراد کو انسانی امداد کی ضرورت ہوگی۔

اقوام متحدہ کے رابطہ دفتر برائے انسانی معاملات، او سی ایچ اے نے میانمار میں انسانی ہمدردی کی بنیاد پر امداد کی ضرورت سے متعلق ایک رپورٹ جاری کی ہے۔

رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ گزشتہ سال فروری میں فوجی بغاوت کے بعد میانمار میں خوراک اور ایندھن کی قیمتوں میں بڑا اضافہ ہوا ہے۔

رپورٹ میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ کورونا وائرس کی عالمی وباء کے باعث ملک کی انسانی صورتحال مزید سنگین ہوئی ہے، رپورٹ میں تخمینہ لگایا گیا ہے کہ ایک کروڑ44 لاکھ افراد کو خوراک و طبی سامان جیسی امداد کی ضرورت ہوگی

او سی ایچ اے نے تعلیم پر کورونا وائرس کی وباء کے اثرات سے متعلق تشویش ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ سنہ 2020ء اور2021ء میں اسکولوں کی بندش سے تقریباً ایک کروڑ20 لاکھ بچوں کی تعلیم متاثر ہوئی۔

رپورٹ کے مطابق میانمار کے لوگوں کو ایسے سیاسی، معاشرتی واقتصادی، انسانی حقوق اور انسانی امداد کے بحران کا سامنا ہے جس کی پہلے کوئی مثال نہیں ملتی اور اس کے ساتھ ضروریات ڈرامائی انداز میں تیزی سے بڑھ رہی ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.

Back to top button