News
Trending

I am not silent if the government falls or not. Imran Khan

Defenders: Prime Minister Imran Khan has bluntly announced that he will not resign under any circumstances, a day before the vote is a surprise for the opposition.

According to details, a meeting was held between the Prime Minister and Imran Khan. In the meeting, the Prime Minister said that he would not resign under any circumstances. A meeting has been held with Chaudhry Nisar. The card will appear.

Referring to the opposition, the Prime Minister said that the opposition has already shown all its cards and their politics is about to end. Write that the no-confidence motion will fail.

Regarding the allies, he said that the allies would decide to stay with the government after the 27th meeting.

Imran Khan said that Pakistan is saved today because of the Pak army, there are good relations with the army even today, if there was no army then the country would be divided into three parts, the army is being attacked continuously Is in dire need.

The Prime Minister said that the politics of PML-N is to prevent theft, in any case, NRO will not be obtained, the fight has just started, I am not going to give up, as long as I am alive I will not sit with these thieves.

Referring to Shahbaz Sharif, he said that the question of working with Shahbaz Sharif would not have arisen, these people have come out against me to save their corruption.

On the presidential reference, Imran Khan said that the Supreme Court sent the reference in order to obstruct the buying and selling of votes. There is no need for an attack like in Iraq.

The Prime Minister further said that let there be a fight, it will be known who resigns, the people will be in Islamabad on March 27, such a big meeting has never been held in the history of Pakistan, I have held the largest meeting in Pakistan Credit goes to me too.

Criticizing Nawaz Sharif, he said that media houses have been bought by Nawaz Sharif and the envelope culture has been brought to Pakistan by Nawaz Sharif.

Imran Khan further said that the purpose of the reference in the Supreme Court is not to delay the no-confidence motion. It has already been said in the court that the reference and the parliamentary procedure will be different. Our aim is to hold clean and transparent elections in the country. Videos of Yousuf Gilani’s sitting came to light but no action was taken.

The Prime Minister said that Shahbaz Sharif is guilty, why should I sit with him, I will not insult myself by sitting with a thief like Shahbaz Sharif. No matter how much pressure the thieves have, I am going to fight to the last. If the fight has not started yet, then where did the resignation come from? I do not understand why the resignation is being talked about.

He made it clear that he was ready to leave the government but would not resign, adding that he would not remain silent if the government fell.

Referring to the news of Neutral, Imran Khan said that the word neutral was misinterpreted, there is no distance from anyone, the talk of distances from the Army Chief is wrong, should I raise my hand before the fight? Maulana Fazlur Rehman is the 12th player in politics, we will win the no-confidence match.

Defenders I am not be silent if the government falls or not
Defenders, I am not silent if the government falls or not 

اسلام آباد : وزیراعظم عمران خان نے دو ٹوک اعلان کیا ہے کہ کسی بھی صورت استعفیٰ نہیں دوں گا، ووٹنگ سے ایک دن پہلے اپوزیشن کیلئے سرپرائز ہے۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان سے صحافیوں کی ملاقات ہوئی ، ملاقات میں وزیراعظم نے کہا کہ کسی بھی صورت استعفیٰ نہیں دوں گا،چوہدری نثار سے ملاقات ہوچکی ہے، ووٹنگ سے ایک دن پہلے اپوزیشن کو سرپرائز ملے گا اور ووٹنگ سے ایک دن پہلے میرا کارڈ سامنے آئے گا۔

اپوزیشن کے حوالے سے وزیراعظم کا کہنا تھا کہ اپوزیشن پہلے ہی اپنے سارے کارڈز شو کرچکی ہے اور ان کی سیاست ختم ہونے والی ہے، یہ لکھ لیں کہ تحریک عدم اعتمادناکام ہوگی۔

اتحادیوں سے متعلق انھوں نے کہا اتحادی 27 تاریخ کے جلسے کے بعد حکومت کیساتھ رہنے کا فیصلہ کریں گے ، تحریک انصاف کی مقبولیت میں حالیہ دنوں بےپناہ اضافہ دیکھنے کو آیا۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ پاکستان آج بچا ہوا ہے تو پاک فوج کی وجہ سے بچا ہوا ہے، فوج کیساتھ آج بھی اچھے تعلقات ہیں، فوج نہ ہوتی تو ملک کے تین ٹکڑے ہوجاتے ، فوج پر مسلسل حملے کئے جارہے ہیں ، پاکستان کو فوج کی سخت ضرورت ہے۔

وزیراعظم نے کہا کہ ن لیگ کی سیاست چوری بچانے کے لئے ہے، کسی بھی صورت این آر او نہیں ملے گا، ابھی تو لڑائی شروع ہوئی ہے میں ہار ماننے والا نہیں، جب تک زندہ ہوں ان چوروں کیساتھ نہیں بیٹھوں گا۔

شہباز شریف کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ شہباز شریف کیساتھ بیٹھ کر کام کرنے کا سوال ہی پیدانہیں ہوتا، یہ لوگ اپنی کرپشن بچانے کیلئے میرے خلاف کٹھے ہوئے ہیں۔

صدارتی ریفرنس پر عمران خان نے کہا سپریم کورٹ ریفرنس اس لئےبھیجا تاکہ ووٹوں کی خریدوفروخت پررکاوٹ آئے ، یہاں پرعرا ق کی طرح حملے کی ضرورت نہیں صرف 20ممبران پارلیمنٹ کو خریدیں۔

وزیراعظم کا مزید کہنا تھا کہ لڑائی ہونے دیں پتہ چلے گا کون استعفیٰ دیتاہے، 27مارچ کوعوام کو سمندراسلام آباد میں ہوگا، اتنا بڑا جلسہ پاکستان کی تاریخ میں کبھی نہیں ہوا ہوگا، پاکستان میں سب سے بڑےجلسے میں نے کیے ہیں، مینارپاکستان کو بھرنے کا کریڈٹ بھی مجھے جاتا ہے۔

نواز شریف پر تنقید کرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ میڈیا ہاؤسز کو نوازشریف نے خرید اہوا ہے، پاکستان میں لفافہ کلچرنوازشریف لیکر آیا ہے۔

عمران خان نے مزید بتایا کہ سپریم کورٹ میں ریفرنس کا مقصدتحریک عدم اعتمادکی تاخیری ہرگزنہیں، یہ تومیں عدالت میں کہہ چکا ریفرنس اور پارلیمانی پروسیجرالگ الگ چلے گا، ہمارامقصد ملک میں صاف شفاف انتخابات کا انعقاد ہے، شفاف الیکشن کیلئےہی سینیٹ الیکشن کےوقت ریفرنس دائرکیاتھا، یوسف گیلانی کے بیٹھے کی ویڈیوز منظرعام پرآئیں کوئی کارروائی نہیں ہوئی۔

صحافیوں نے سوال کیا کہ کامران خان نےوی لاگ میں4مطالبےہیں، کامران خان کہتے ہیں جنرل فیض اور بزدار پر فیصلے کریں ؟وزیراعظم عمران خان نے جنرل فیض اور بزدار سےمتعلق سوال پر قہقہہ لگاتے ہوئے کہا کامران خان کو کون بتاتا ہے کہ میں نے کیا کرنا ہے۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ شہباز شریف مجرم ہے،اس کے ساتھ کیوں بیٹھوں گا، شہباز شریف جیسے چور کے ساتھ بیٹھ کر اپنی توہین نہیں کروں گا۔ چوروں کا جتنا بھی دباؤ ہو آخری بال تک لڑنے والا ہوں، ابھی تو لڑائی شروع ہی نہیں ہوئی تو استعفیٰ کہاں سے آگیا ، مجھے توسمجھ نہیں آتی استعفے کی بات کیوں کی جارہی ہے۔

انھوں نے واضح کیا کہ حکومت چھوڑنے کیلئے تیار ہوں مگرانہیں استعفیٰ نہیں دوں گا، حکومت گر گئی تو چپ نہیں بیٹھوں گا۔

نیوٹرل کی خبروں کے حوالے سے عمران خان نے کہا کہ نیوٹرل والی بات کا غلط مطلب لیا گیا، کسی سے کوئی دوریاں نہیں ، آرمی چیف سے دوریوں کی بات غلط ہے، کیا لڑائی سے پہلے ہاتھ کھڑے کردوں ؟ مولانا فضل الرحمان سیاست کے 12ویں کھلاڑی ہیں، عدم اعتماد والا میچ ہم جیتیں گے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.

Back to top button