Uncategorized

Hindu leader Kali Charan arrested for spewing poison against Muslims and Gandhi

New Delhi: Indian police have arrested extremist Hindu leader Kali Charan Maharaj for making provocative speeches against Muslims and Mahatma Gandhi.

According to a report of a foreign news agency, Raipur police from the Indian state of Madhya Pradesh have arrested hardline Hindu leader Kali Charan Maharaj where he had gone into hiding in Madhya Pradesh for several days.

Police have arrested Kali Charan Maharaj for making hate speech against Muslims and cursing Mahatma Gandhi.

The extremist Hindu leader paid homage to Nathuram Godse, who assassinated Mahatma Gandhi during a function in Raipur, Chhattisgarh, and said that Gandhi had destroyed India.




Hindu leader Kali Charan arrested for spewing poison against Muslims and Gandhi

نئی دہلی : بھارتی پولیس نے مسلمانوں اور مہاتما گاندھی کے خلاف اشتعال انگیز تقاریر کرنے والا انتہا پسند ہندو رہنما کالی چرن مہاراج کو گرفتار کرلیا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق بھارتی ریاست ‌مدھیہ پردیش سے رائے پور پولیس نے سخت گیر ہندو رہنما کالی چرن مہاراج کو گرفتار کیا ہے جہاں وہ کئی روز سے مدھیہ پردیش جاکر چھپ گئے تھے۔

پولیس نے کالی چرن مہاراج کے خلاف مسلمانوں کے خلاف نفرت انگیز تقریر اور مہاتما گاندھی کو برا بھلا کہنے پر گرفتار کیا ہے۔

انتہا پسند ہندو رہنما نے ریاست چھتیس گڑھ کے شہر رائے پور میں ایک تقریب کے دوران مہاتما گاندھی کو قتل کرنے والے نتھو رام گوڈسی کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ گاندھی بھارت کو تباہ و برباد کردیا۔

دوسری جانب مہاراج نے اسلام اور مسلمان کے خلاف بھی اپنی زہریلی زبان کو جنبش دی اور کہا کہ اسلام اپنے نظریات کا سہارا لیکر تمام قوموں پر قابض ہونا چاہتا ہے۔

انہوں نے لوگوں کو مشتعل کرنے والی تقاریر کے دوران ہندوؤں سے درخواست کی کہ ہندو نظریات کو بچانے کےلیے سخت گیر ہندوؤں رہنماؤں کو الیکشن میں منتخب کریں۔

تقریب میں موجود کانگریس رہنماؤں نے کالی چرن کے خلاف مقدمہ درج کرایا تھا، جس کے بعد وہ گرفتاری کے ڈر سے روپوش ہوگئے تھے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.

Back to top button