ٰٰInternational News

Four regions of Ukraine included in Russia


International news four regions of Ukraine included in Russia President Putin will make the announcement on Friday
  یوکرین کے چار علاقے  روس میں شامل جمعے کو صدر پیوٹن اعلان کریں 



International news Russian President Vladimir Putin will sign the annexation of four more Ukrainian regions at a ceremony on Friday. Ukraine and Western countries condemned and rejected the referendum held there.

Russian-backed officials said the five-day so-called referendum won the support of almost the entire population.

Voting was held in Luhansk and Donetsk in the east and Zaporizhia and Kherson in the south.

On this occasion, the Russian President will also make a big speech in the Kremlin.

روس کے صدر ولادیمیر پوتن جمعے کو ایک تقریب میں یوکرین کے چار مزید علاقوں کے الحاق پر دستخط کریں گے
 یوکرین اور مغربی ممالک نے وہاں ہونے والے ریفرنڈم کی مذمت کی تھی اور اسے مسترد کیا تھا۔
روسی حمایت یافتہ حکام کا کہنا تھا کہ اس پانچ روزہ نام نہاد ریفرنڈم میں وہاں کی تقریباً تمام آبادی کی حمایت حاصل ہوئی۔

یہ ووٹنگ مشرق میں لوہانسک اور ڈونٹسک جبکہ جنوب میں زاپوریژیا اور خیرسون میں کرائی گئی۔
اس موقع پر روسی صدر کریملن میں ایک بڑی تقریر بھی کریں گے۔


Four region of Ukraine include in Russia International News 
Four region of Ukraine include in Russia International News 
The stage is already set in Moscow's Red Square. On the billboards installed there, these four regions are declared as part of Russia. Meanwhile, the annexation of Crimea in 2014 was also echoed. There, too, Russia's referendum was universally rejected. President Putin gave a speech from a stage even after this accession.

However, no independent monitoring was conducted during the referendum. There are reports that election officials went door to door with soldiers.

The US says it will impose more sanctions on Russia. After this referendum, the United States and European Union states are considering the eighth series of sanctions against Russia.

The German foreign minister said on Thursday that people in the occupied territories of Ukraine were forced out of their homes and workplaces under threat and sometimes at gunpoint.

He said that this is against a fair and transparent election. It is against peace, it is a peace of coercion.

ماسکو کے ریڈ سکویر میں پہلے سے سٹیج سج چکا ہے۔ وہاں نصب کیے گئے بل بورڈز پر ان چار علاقوں کو روس کا حصہ قرار دیا گیا ہے۔ اس دوران 2014 میں کریمیا کے الحاق کی بھی بازگشت سنی گئی۔ وہاں بھی روس کے ریفرنڈم کو عالمی سطح پر مسترد کیا گیا تھا۔ صدر پوتن نے اس الحاق کے بعد بھی ایک سٹیج پر سے تقریر کی تھی۔

تاہم ریفرنڈم کے دوران کوئی آزادانہ نگرانی نہیں کرائی گئی۔ ایسی اطلاعات ہیں کہ الیکشن حکام فوجیوں کے ہمراہ گھر گھر گئے۔

امریکہ کا کہنا ہے کہ وہ روس پر مزید پابندیاں لگائے گا۔ اس ریفرنڈم کے بعد امریکہ اور یورپی یونین کی ریاستیں روس پر پابندیوں کے آٹھویں سلسلے پر غور کر رہی ہیں۔

جرمن وزیر خارجہ نے جمعرات کو کہا کہ یوکرین کے مقبوضہ علاقوں کے لوگوں کو دھمکیوں اور بعض اوقات بندوق کی نوک پر گھروں اور کام کی جگہوں سے نکالا گیا۔

ان کا کہنا تھا کہ ’یہ صاف و شفاف الیکشن کے منافی ہے۔ یہ امن کے منافی ہے، یہ زور زبردستی کا امن ہے۔‘

Leave a Reply

Your email address will not be published.

Back to top button