Uncategorized

Democracy in America may end, reveals former US President

WASHINGTON (Reuters) - Former United States President Jimmy Carter has reportedly said that democracy in the United States could end, adding that "democracy in the country is on the verge of collapse, which is a cause for concern."

On the first anniversary of Trump's attack on the US Congress, the former US president has expressed concern over the state of democracy in the United States.

Jimmy Carter warned in an article that democracy in the United States is rapidly declining. In his article in the New York Times, Carter wrote that if no immediate action is taken, internal strife within the United States could erupt, leading to the loss of democracy.
"Before it's too late, we have to settle our differences and get organized," he said. Jimmy Carter said that those who are constantly spreading allegations of electoral fraud are in fact doing so to ensure their victory in the next election. "This is a serious threat to American democracy," he said.

It is noteworthy that in the US election of 2020, the former president of this country had made allegations of election rigging. Trump later incited his supporters to attack the Congress building, of which there is ample evidence. The attack on the Congress is being called historic in American history.
Democracy in America may end, reveals former US President

واشنگٹن : سابق امریکی صدر کا انکشاف کیا ہے کہ امریکا میں جمہوریت ختم ہو سکتی ہے، اطلاعات کے مطابق امریکا کے سابق صدر جمی کارٹر نے کہا ہے کہ ملک میں جمہوریت اب پوری طرح سے خاتمے کی جانب بڑھ رہی ہے جو تشویش کا سبب ہے۔

امریکی کانگریس پر ٹرمپ کے حامیوں کے حملے کی پہلی برسی کے موقع پر اس ملک کے سابق صدر نے امریکا میں جمہوریت کی صورتحال پر تشویش ظاہر کی ہے۔

جمی کارٹر نے اپنے ایک مقالے میں خبردار کیا کہ امریکا میں جمہوریت بہت تیزی سے خاتمے کی جانب بڑھ رہی ہے. نیویارک ٹائمز میں شائع اپنے مقالے میں کارٹر نے لکھا ہے کہ اگر جلدی کوئی قدم نہيں اٹھایا گیا تو امریکا کے اندر داخلی جھڑپیں شروع ہو سکتی ہیں جو ہمارے ہاتھ سے جمہوریت کے نکل جانے کا سبب بنے گی۔

انہوں نے کہا کہ اس سے پہلے کہ بہت دیر ہو جائے ہم کو اپنے اختلافات کو ختم کرکے منظم ہونا ہوگا۔ جمی کارٹر نے کہا کہ وہ لوگ جو انتخابات میں دھاندھلی کے الزامات عائد کرکے اسے مسلسل پھیلا رہے ہیں وہ در حقیقت آئندہ انتخابات میں اپنی فتح کو یقینی بنانے کے لئے ایسا کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ یہ بات امریکی جمہوریت کے لئے شید خطرہ ہے۔

قابل ذکر ہے کہ 2020 کے امریکی انتخابات میں اس ملک کے سابق صدر نے انتخابات میں دھاندھلی کے الزامات عائد کئے تھے۔ بعد میں ٹرمپ نے اپنے حامیوں کو کانگریس کی عمارت پر حملے کے لئے بھڑکایا تھا جس کے بارے میں بہت سے ثبوت موجود ہیں۔امریکی تاریخ میں کانگریس پر حملے کو تاریخی قرار دیا جا رہا ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.

Back to top button