Breaking news

Bring two kilos of garbage, one kilo of rice and vegetables!

Jakarta: A unique campaign has been launched in Indonesia to tackle plastic waste.

According to a report by a foreign news agency, a unique campaign has been launched in the Indonesian island of Bali to deal with plastic waste, in which one kilogram of rice and vegetables are being provided to citizens for stealing two kilograms.

The government's campaign to protect the environment from pollution is gaining traction.

Citizens on the Indonesian island of Bali are happily collecting rice and vegetables from their homes and surrounding areas.

According to the report, after exchanging rice for garbage with the citizens, it is sold to a recycling company.




Bring two kilos of garbage, one kilo of rice and vegetables!

جکارتہ: انڈونیشیا میں پلاسٹک ویسٹ سے نمٹنے کے لیے انوکھی مہم شروع کردی گئی۔

غیرملکی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق انڈونیشیا کے جزیرہ بالی میں پلاسٹک ویسٹ سے نمٹنے کے لیے انوکھی مہم شروع کی گئی ہے جس میں شہریوں کو دو کلو چرا لانے پر ایک کلو چاول اور سبزیاں فراہم کی جارہی ہیں۔

ماحولیات کو آلودگی سے بچانے کے لیے سرکاری مہم کو بھرپور پذیرائی مل رہی ہے۔

انڈونیشیا کے جزیرہ بالی میں شہری گھر اور اطراف کا کچرا خوشی خوشی جمع کرواکے چاول اور سبزیاں حاصل کررہے ہیں۔

رپورٹ کے مطابق شہریوں سے کوڑے دان کے لیے چاول کا تبادلہ کرنے کے بعد اسے ایک ری سائکلنگ کمپنی کو فروخت کیا جاتا ہے۔

انڈونیشن حکام کا کہنا ہے کہ پلاسٹک کے کچرے کا ہر ٹکڑا آج گاؤں والوں اور ہماری معیشت کے لیے بہت قیمتی ہے، چاول کے بدلے تقریباً چار کلو گرام پلاسٹک کا تبادلہ کیا گیا۔

رپورٹ کے مطابق چاولوں کی قیمت تقریباً 15 سے 20 ہزار روپیہ ہے اور مقامی لوگوں کا اندازہ ہے کہ چار افراد کا ایک خاندان روزانہ تقریباً دو کلو گرام چاول کھاتا ہے اس کے لیے یہ کوشش قابل قدر ہے۔

سائنسی جریدے میں شائع ہونے والی 2019 کی ایک تحقیق کے مطابق انڈونیشیا سمندروں میں پلاسٹک کی آلودگی پھیلانے والا دنیا کا دوسرا بڑا ملک ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.

Back to top button