BusinessNewsTechWorld

ہواوے کی اعلیٰ اہلکار وطن روانہ اور کینیڈین شہریوں کی رہائی

امریکا اور چین کے درمیان طے پانے والی ایک ڈیل کے نتیجے میں کینیڈا میں ہواوے کمپنی کی اہلکار کو رہا کر ديا گيا ہے اور وہ اپنے وطن روانہ ہو گئی ہیں۔ اسی دوران چین نے دو کینیڈین شہریوں کو بھی رہا کر ديا ہے۔

دنیا کی بڑی کمپنیوں میں شمار کی جانے والی ڈیجیٹل کمپنی ہواوے کی چیف فنانشل افسر مینگ وانژو کی رہائی کے بعد وطن واپسی کا چین کے سرکاری میڈیا نے خیر مقدم کیا ہے۔ مینگ نے قریب ایک ہزار ایام تک اپنے گھر ميں نظر بندی ميں وقت گزارا۔

چینی میڈیا نے خاتون اہلکار پر بینک فراڈ کے الزامات کو ‘بے بنیاد‘ قرار دیا تھا۔ اسی دوران بیجنگ حکومت دو کینیڈین شہریوں کی رہائی پر مکمل خاموش ہے۔ ان کی رہائی کو مینگ وان ژو کی نظربندی ختم کرنے کے ساتھ جوڑا جا رہا ہے۔

چینی کمپنی ہواوے کی سینئر اہلکار مینگ وان ژو کا طیارہ امریکی فضائی حدود کو نظر انداز کرتے ہوئے قطب شمالی کے اوپر سے چین کی جانب روانہ ہوا۔

مینگ نے اپنے بیان میں کہا کہ اپنے وطن کی جانب جاتے ہوئے ان کی آنکھیں خوشی کے آنسوؤں سے بھری ہوئی ہیں۔ اپنے بیان میں وان ژو نے یہ بھی کہا کہ ان کی رہائی صرف اور صرف ایک مضبوط وطن کی وجہ سے ہوئی ہے اور اگر ان کا تعلق چین سے نہ ہوتا تو انہیں آزادی نصیب نہ ہوتی۔

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button