NewsSports

پاکستانی کرکٹ ٹیم 18 سال بعد نیوزی لینڈ کے خلاف کھیلے گی۔

Pak Vs NZ

نیوزی لینڈ کرکٹ ٹیم سن 2003 کے بعد پہلی مرتبہ پاکستانی سرزمین پر پانچ ٹی ٹوئنٹی اور تین ون ڈے میچز پر مشتمل دوطرفہ سیریز کھیلنے کے لیے پہنچی ہے۔ ہوم سیریز میں کپتان بابر اعظم عمدہ کارکردگی کے لیے پرامید ہیں۔

پاکستان میں سکیورٹی کی صورتحال میں خاطر خواہ بہتری کے نتیجے میں ملک میں بین الاقوامی کرکٹ کی واپسی  کا سلسلہ جاری ہے۔ نیوزی لینڈ ٹیم بھی اٹھارہ سال بعد پاکستانی کرکٹ گراؤنڈز میں پاکستانی شائقین کرکٹ کے سامنے جلوہ گر ہونے کے لیے پہنچ چکی ہے۔ راولپنڈی میں پاکستانی اور کیوی کھلاڑیوں کے پریکٹس سیشنز بھی جاری ہیں، جہاں دوطرفہ سیریز کا پہلا ایک روزہ میچ سترہ ستمبر کو کھیلا جائے گا۔

اس موقع پر نیوزی لینڈ کی ٹیم کے کئی سینئر کھلاڑی انڈیئن پریمیئر لیگ  کی وجہ سے پاکستان کے خلاف سیریز کا حصہ نہیں بن رہے، جن میں اسٹار بلے باز کین ولیمسن، فاسٹ باؤلر ٹرینٹ بولٹ، ٹِم ساؤتھی اور کائل جیمیسن شامل ہیں۔

اس حوالے سے پاکستانی ٹیم کے کپتان بابر اعظم  کا سیریز کے آغاز سے قبل کہنا ہے کہ نیوزی لینڈ ٹیم میں کھلاڑی کوئی بھی ہوں، وہ کبھی بھی آسان حریف نہیں ہوتے۔ ان کے بقول، ”نیوزی لینڈ کے بیسٹ کھلاڑی پاکستان آتے تو یقیناﹰ اچھا رہتا لیکن ہم اپنے بہترین کھیل کا مظاہرہ کریں گے اور سیریز جیتنے کی کوشش کریں گے۔‘‘

نیوزی لینڈ کی ٹیم اب تک پاکستان کے خلاف گزشتہ پندرہ ایک روزہ میچوں میں سے تیرہ میں کامیاب رہی ہے لیکن بنگلا دیش کے خلاف پچھلی ٹی ٹوئنٹی سیریز  میں ناتجربہ کار کھلاڑیوں کے ساتھ نئے کپتان ٹام لیتھم کی سربراہی میں اسے شکست کا سامنا کرنا پڑا تھا

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button