News

لندن: برطانوی وزیر دفاع نے امریکا سے متعلق بیان داغ کر عالمی دنیا کو حیرت زدہ کردیا ہے۔

America

میڈیا رپورٹ کے مطابق ایک حالیہ انٹرویو میں برطانیہ کے وزیر دفاع بین والس نے کہا کہ ایک سپر پاور جب کسی معاملے پر ڈٹ جانے کے لیے تیار نہ ہو تو وہ سپر پاور نہیں کہلاتی، بلاشبہ امریکا اب بھی ایک بڑی طاقت ہے، لیکن اب وہ ایک عالمی طاقت ہے۔

انہوں نے کہا کہ حالیہ چند ہفتوں نے افغانستان میں جو کچھ ہوا اور دنیا نے دیکھا، اس کا بیج صدر بائیڈن کے عہدہ سنبھالنے سے پہلے بویا گیا تھا۔

بین والس امریکی انخلا پر کڑی تنقید کرتے آئے ہیں اور اس کا الزام سابق صدر ڈونلڈ ٹرمپ پر لگا چکے ہیں، ٹرمپ انتظامیہ نے فروری دو ہزار بیس میں طالبان کے ساتھ ایک معاہدہ کیا تھا جس کے تحت امریکا مئی دو ہزار اکیس تک اپنی افواج افغانستان سے نکال لے گا، جو بائیڈن انتظامیہ نے اس معاہدے کو برقرار رکھا، البتہ انخلا کے دورانیہ کو بڑھا دیا تھا۔

گزشتہ ماہ والس نے کہا تھا کہ اگر میری رائے پوچھیں تو دراصل اس کی بنیاد ڈونلڈ ٹرمپ نے ڈالی تھی، صدر بائیڈن کو تو یہ مسئلہ وراثت میں ملا، اس معاہدے سے طالبان کو جو تحریک ملی ہے، اسی وجہ سے وہ سمجھتے ہیں کہ وہ جیت گئے ہیں۔

اپریل میں بھی والس نے طالبان، ٹرمپ معاہدے کو ایک گلا سڑا اور بوسیدہ معاہدہ قرار دیا تھا، معاہدہ ہوتے ہی مجھے لگا کہ بین الاقوامی برادری کی حیثیت سے ہمیں اس کی قیمت چکانا پڑے گی۔

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button