News

غیرقانونی کرنسی کاروبار کے خلاف کریک ڈاؤن میں 15 ملزمان گرفتار

 وفاقی تحقیقاتی ایجنسی (ایف آئی اے) نے غیر قانونی کرنسی کے کاروبار، ذخیرہ اندوزی اور اسمگلنگ کے خلاف بڑے پیمانے پر کریک ڈاؤن شروع کیا ہے اور کراچی میں ایک بڑے چھاپے کے دوران 2 کروڑ 90 لاکھ روپے کے مقامی اور غیر ملکی کرنسی نوٹ ضبط کرلیے ہیں۔

ڈان اخبار کی رپورٹ کے مطابق ایف آئی اے سندھ کے ڈائریکٹر عامر فاروقی نے کہا کہ چھاپے منی چینجرز کی ایسوسی ایشن اور اسٹیٹ بینک آف پاکستان (ایس بی پی) کو اعتماد میں لینے کے بعد کیے گئے۔

انہوں نے کہا کہ انٹیلی جنس رپورٹس تھیں کہ غیر قانونی طور پر ذخیرہ اندوزی اور بعد میں اسمگلنگ کے مقصد کے لیے پیسے غیر قانونی طور پر فروخت کیے اور جعلی (بینک) کھاتوں میں ڈالے جارہے ہیں۔

انٹیلی جنس رپورٹس کے مطابق پاکستان بھر میں 79 افراد اور کاروبار، ریاست مخالف اور مجرمانہ سرگرمیوں میں ملوث ہیں۔

ایف آئی اے کے ڈائریکٹر جنرل ثنا اللہ عباسی نے ایجنسی کے زونل ڈائریکٹرز کے ایک اجلاس کی صدارت کی اور ہنڈی کے غیر قانونی کاروبار اور غیر ملکی کرنسی کی ذخیرہ اندوزی کے خلاف کارروائی کی ہدایات دیں۔

ایک عہدیدار نے بتایا کہ بڑے پیمانے پر کریک ڈاؤن شروع کیا گیا اور پورے پاکستان میں 51 چھاپے مارے گئے، سرحدی علاقے قابل ذکر ہیں، جس میں 15 مشتبہ افراد کو مزید تفتیش کے لیے حراست میں لیا گیا اور اب تک 8 ایف آئی آرز درج کی گئی ہیں

چھاپوں کے دوران غیر ملکی اور مقامی کرنسیوں کی بھاری مقدار ضبط کی گئی جبکہ غیر قانونی کرنسی کے کاروبار میں ملوث ہونے کے الزام میں پشاور میں 20 سے زائد دکانوں کو سیل کر دیا گیا۔

ان کا کہنا تھا کہ قانون نافذ کرنے والے تمام اداروں اور صوبائی انتظامیہ کے تعاون کے ساتھ ایف آئی اے کی 25 سے زائد ٹیموں نے کرنسی کی غیر قانونی فروخت اور خریداری اور اسمگلنگ کے خلاف انٹیلی جنس رپورٹ پر مبنی آپریشن کیا۔

انہوں نے بتایا کہ اس کے نتیجے میں امریکی ڈالر کی قیمت مستحکم ہو گئی ہے اور بعض علاقوں میں یہ نیچے بھی آئی ہے، یہ کارروائی اس وقت تک جاری رہے گی جب تک کہ اس غیر قانونی کرنسی کے کاروبار اور اسمگلنگ کو ختم نہیں کیا جاتا۔

ایف آئی اے کے اینٹی کرپشن سرکل نے خفیہ اطلاع پر کارروائی کرتے ہوئے کراچی کے ڈیفنس فیز ٹو ایکسٹیشن میں واقع سوئس ایکسچینج کمپنی کے دفتر پر چھاپہ مارا اور اس کے منیجر سلطان دامانی کو حراست میں لے لیا۔

ایف آئی اے کے اہلکار نصر اللہ خان نے بتایا کہ چھاپے کے دوران ایف آئی اے کی ٹیم نے پاکستانی اور غیر ملکی کرنسیوں، ایک لاکھ 80 ہزار ڈالر، 3 ہزار پاؤنڈ اور ایک کروڑ 43 لاکھ 4 ہزار 390 روپے ضبط کیے۔

ملزم نے تفتیش کاروں کو بتایا کہ اس کے کمرے سے برآمد ہونے والے غیر ملکی اور مقامی کرنسی نوٹ ایکسچینج کمپنی کا ظاہر شدہ سرمایہ نہیں ہے اور وہ اس رقم کو ’غیر ملکی کرنسی کی غیر قانونی فروخت/خریداری اور حوالہ/ہنڈی‘ کے لیے استعمال کر رہا تھا۔

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button