NewsWorld

عسکریت پسندوں کو حملوں کی اجازت نہیں دیں گے، طالبان حکومت

Afghan Taliban

افغانستان کے نئے وزیر خارجہ امیرخان متقی نے کہا ہے کہ طالبان حکومت کسی فرد یا گروپ کو اپنی سرزمین کو کسی بھی دوسرے ملک کے خلاف استعمال کرنے کی کبھی اجازت نہیں دے گی۔ انہوں نے امریکا سے اپنا دل بڑا کرنے کے لیے بھی کہا۔

افغانستان کے نئے وزیر خارجہ امیر خان متقی نے کہا ہے کہ طالبان حکومت اپنے اس عزم پر قائم ہے کہ وہ عسکریت پسندوں کو دیگر ملکوں پر حملوں کے لیے افغان سر زمین استعمال کرنے کی اجازت نہیں دے گی۔ تاہم انہوں نے اس بارے میں کچھ بتانے سے انکار کر دیا کہ ملک کے نئے حکمران ایسی حکومت کب قائم کریں گے، جس میں تمام فریق شامل ہوں یا پھر وہ ایسا کریں گے بھی یا نہیں۔

خبر رساں ادارے ایسوسی ایٹڈ پریس (اے پی) کے مطابق افغان دارالحکومت کابل میں منگل کے روز اپنی پہلی پریس کانفرنس میں امیر متقی نے کہا، ”ہم کسی فرد یا گروپ کو اپنی سر زمین کسی بھی دوسرے ملک کے خلاف استعمال کرنے کی اجازت نہیں دیں گے۔”

امریکا اور طالبان کے درمیان جس دوحہ معاہدے کے تحت امریکی فوج کا افغانستان سے انخلاء عمل میں آیا ہے اس میں طالبان نے وعدہ کیا تھا کہ وہ القاعدہ اور دیگر عسکریت پسند گروپوں سے روابط ختم کردیں گے اور اس امر کو یقینی بنایا جائے گا کہ عسکریت پسند افغانستان کی سرزمین کو کسی دوسرے ملک کے خلاف نہ تو استعمال کریں اور نہ ہی وہاں رہ کر کسی دوسرے ملک کے لیے خطرہ بنیں گے

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button