News

ذہنی تکلیف مرض ہے، پاگل پن نہیں

Depression

کوئی بھی شخص خود ابنارمل نہیں بنتا بلکہ تجربات اسے ابنارمل بنا دیتے ہیں۔ اگر ہم خوشگوار تجربات کا سامنا کریں گے تو ہماری سوچ مثبت ہوگی ورنہ منفی سوچ ہی اجاگر ہو گی۔

ذہنی دباؤ، تفکر، اداسی ، اینگزائٹی اور معمولات زندگی میں عدم دلچسپی بہت نارمل انسانی رویے ہیں۔ تاہم ان علامات کا دورانیہ بڑھنے اور شدت آنے سے باہمی تعلقات اور معمولات زندگی متاثر ہونے لگ جائیں تو پھر انہیں ایک بیماری کے طور پر دیکھا جانا چاہیے۔

ذہنی امراض جسمانی امراض کی طرح ہوتے ہیں جن کا علاج بھی اتنا ہی ضروری ہوتا ہے جتنا کہ جسمانی بیماری کا۔ ہمارے معاشرے میں ذہنی تکالیف کو سرے سے امراض سمجھا ہی نہیں جاتا۔

ذہنی بیماریوں کو ہم پاگل پن کہہ کر ہنسی میں اڑا دیتے ہیں جبکہ ان کے اثرات بہت ہی سنگین ہوتے ہیں۔ لاپرواہی یا بدنامی کے ڈر سے بہت سے لوگ علاج سے محروم رہ جاتے ہیں۔ نفسیاتی معالج سے مشورہ لینے کا مطلب ہرگز یہ نہیں کے کوئی پاگل ہو گیا ہے۔

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button